Breaking News
Home / پاکستان / مولانا فضل الرحمان نے 1988 سے موروثی سیاست، جھوٹ اور کرپشن ڈے اکابرین کو بدنام کیا،مولانا عبد القادر نو نی

مولانا فضل الرحمان نے 1988 سے موروثی سیاست، جھوٹ اور کرپشن ڈے اکابرین کو بدنام کیا،مولانا عبد القادر نو نی

مولانا فضل الرحمان نے 1988 سے موروثی سیاست، جھوٹ اور کرپشن ڈے اکابرین کو بدنام کیا،مولانا عبد القادر نو نی

اسلام آباد 26 دسمبر(ڈیلی پاکستان آن لائن) جمعیت علمائے اسلام نظریاتی کے نائب امیر مولانا عبد القادر لونی نے کہا ہے کہ مولانا فضل الرحمان نے 1988 سے موروثی سیاست، جھوٹ اور کرپشن ڈے اکابرین کو بدنام کیا،پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ ن نے باریاں لگا کر حکومت کی،اب قانون کے مطابق دونوں جماعتیں تحریک انصاف کو بھی پانچ کی مدت پوری کرنے دیں،حکومت گرانا مسائل کا حل نہیں، جمہوری استحکام کیلئے پارلیمنٹ کردار ادا کرے،مولانا شیرانی بھی سلیکٹڈ تھے اور فضل الرحمان بھی سلیکٹڈ ہیں ،دونوں رہنماوں میں کوئی فرق نہیں ۔

پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ مولانا فضل الرحمان نے 1988 سے موروثی سیاست، جھوٹ اور کرپشن ڈے اکابرین کو بدنام کیا،کرپشن،خیانت اور جھوٹ سے باز نہ آنے پر ہم نے ان سے راستہ الگ کیا،پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ ن نے باریاں لگا کر حکومت کی،اب قانون کے مطابق دونوں جماعتیں تحریک انصاف کو بھی پانچ کی مدت پوری کرنے دیں،حکومت گرانا مسائل کا حل نہیں، جمہوری استحکام کیلئے پارلیمنٹ کردار ادا کرے۔

انہوں نے کہاکہ پی ڈی ایم اور دھرنے صرف حصول اقتدار اور موروثی سیاست کی خواہش ہے،پی ڈی ایم پارلیمانی نظام کے خلاف بغاوت، آئین اور جمہوریت کی بساط لپیٹنے کی کوششوں میں مصروف ہے،پی ڈی ایم کی قیادت ماضی قریب میں ایک دوسرے پر کرپشن کے الزام لگا چکے ہیں،اپوزیشن کی سیاسی محاذ آرائی سیاست اور جمہوریت کیلئے نقصان پہنچانے کا موجب بن رہی ہے،31 سال میں اقتدار میں رہنے والے ملک و قوم کے مسائل حل۔کرنے میں ناکام رہے،نواز شریف اور آصف زرداری نے این آر او حاصل کرنے کیلئے مولانا فضل الرحمان کو وکیل بنایا ہے،انہوںنے کہاکہ مولانا شیرانی بھی سلیکٹڈ تھے اور فضل الرحمان بھی سلیکٹڈ ہیں ،مولانا شیرانی نے جعل سازی کی بنیاد رکھی جسے اب مولانا فضل الرحمان نے پروان چڑھایا ،دونوں رہنماوں میں کوئی فرق نہیں ہے،

User Rating: Be the first one !

About Daily Pakistan

Check Also

جہاں عدالتوں کا احترام ختم ہو جائے وہاں خونی انقلاب آتا ہے، چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ جسٹس قاسم خان

جہاں عدالتوں کا احترام ختم ہو جائے وہاں خونی انقلاب آتا ہے، چیف جسٹس لاہور …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Skip to toolbar