Home / انٹر نیشنل / کرونا وبا کی وجہ سے دبئی سے اپریل میں بیرون ملک ترسیلاتِ زر میں65فی صد کمی

کرونا وبا کی وجہ سے دبئی سے اپریل میں بیرون ملک ترسیلاتِ زر میں65فی صد کمی

ڈیلی پاکستان آن لائن

دبئی: خلیج تعاون کونسل (جی سی سی)کے رکن ممالک میں کرونا وائرس کی وبا پھیلنے کے بعد سے مختلف کاروباروں اور ان ممالک میں مقیم تارکینِ وطن کی آمدنیوں پر منفی اثرات مرتب ہورہے ہیں اور اب وہ اپنے آبائی ممالک کو بہت تھوڑی رقوم بھیج رہے ہیں۔میڈیارپورٹس کے مطابق یو اے ای کی ایک ایکس چینج کمپنی ڈیلما نے بتایاکہ اپریل میں غیرملکی مکینوں کی جانب سے انفرادی طور پر اپنے آبائی ممالک کو بھیجی جانے والی ترسیلاتِ زر میں 65 فی صد تک کمی واقع ہوئی ۔کارپوریٹ ترسیلاتِ زر میں بھی تین سے چار فی صد تک کمی واقع ہوئی ۔ڈیلما ایکس چینج کے مطابق 2020 میں ترسیلات زر میں 20 فی صد تک کمی متوقع ہے۔اس کا کہنا تھا کہ عالمی مارکیٹ میں تیل کی کم ترین قیمتوں اور کرونا وائرس کے جی سی سی ممالک کی معیشتوں پر منفی اثرات مرتب ہورہے ہیں۔اس کا ایک مطلب یہ ہے کہ کونسل کے رکن دولت مند ممالک سے بھارت ، پاکستان اور مصر ایسے ممالک میں کم رقوم کی ترسیل ہورہی ہے۔ڈیلما ایکس چینج میں کارپوریٹ سیلز کے سربراہ نضیش دیوادیجا کا کہنا تھا کہ کاروباروں کے دروازے بند ہوچکے ہیں، فضائی کمپنیوں نے اپنے طیارے گرانڈ کردیے ہیں اور لوگ اپنے آبائی ممالک کو لوٹ رہے ہیں۔ کوئی معاشی سرگرمی نہ ہونے کی وجہ سے آجر بھی بے دست وپا ہوگئے ہیں۔ ان حالات میں جی سی سی کے تمام ممالک میں روزگاروں کے لیے خطرات پیدا ہوگئے ہیں۔ان سب عوامل کے ترسیلات زر بھی اثرات مرتب ہوں گے۔کرونا وائرس کی وبا سے نمٹنے کے لیے جی سی سی کی حکومتوں نے اپنے سرکاری اخراجات میں کمی کردی ہے،اس وبا کی وجہ سے بعض بڑے منصوبوں پر کام روک دیا گیا ہے۔ چناں چہ ان منصوبوں پر کام کرنے والے بہت سے تارکین وطن ورکروں میں اپنے آبائی ممالک کو رقوم بھیجنے کی سکت نہیں رہی ہے بلکہ اب تو ان میں سے بہت سے افراد نان جویں کے محتاج ہوکر رہ گئے ہیں۔

User Rating: Be the first one !

About Daily Pakistan

Check Also

نیہا ککڑ اور روہن پریت سنگھ کی لو اسٹوری سوشل میڈیا میں ہوئی وائرل

نیہا ککڑ اور روہن پریت سنگھ کی لو اسٹوری سوشل میڈیا میں ہوئی وائرل ممبئی: …

Skip to toolbar