Breaking News
Home / پاکستان / حکومت نے جاسوسی کے زریعے جائیدادیں ڈھونڈی، درخواست کو کیس کا حصہ بنایا جائے، جسٹس قاضی فائزعیسیٰ

حکومت نے جاسوسی کے زریعے جائیدادیں ڈھونڈی، درخواست کو کیس کا حصہ بنایا جائے، جسٹس قاضی فائزعیسیٰ

جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کی حکومت کی جانب سے فیملی کی جائیدادوں کو مختلف ویب سائٹس کے ذریعے ڈھونڈنے کے موقف کی تردید

درحقیقت جاسوسی کے زریعے جائیدادیں ڈھونڈیں گئیں ،درخواست کو کیس کا حصہ بنایا جائے، جسٹس قاضی فائزعیسیٰ نے جواب جمع کرادیا

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) سپریم کورٹ کے جج جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے حکومت کی جانب سے فیملی کی جائیدادوں کو مختلف ویب سائٹس کے ذریعے ڈھونڈنے کے موقف کی تردید کردی ۔

پیر کو سپریم کورٹ کے جج جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے حکومتی موقف پر اپنا جواب جمع کروادیا ۔

جسٹس قاضی فائز عیسی نے حکومت کی جانب سے فیملی کی جائدادوں کو مختلف ویب سائیٹس کے ذریعے ڈھونڈنے کے موقف کی تردید کردی ۔

جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے کہاکہ حکومت نے میرے اہلخانہ کی جاسوسی کرکے جائیدادوں کی معلومات حاصل کیں ،شہزاد اکبر اور ضیا ءالمصطفیٰ نے عدالت کو اپنے پہلے موقف کے زریعے گمراہ کرنے کی کوشش کی ۔

انہوں نے کہاکہ شہزاد اکبر اور ضیا ءالمصطفیٰ نے عدالت کو گمراہ کرنے پر معافی مانگنے کی بجائے چودہ ماہ بعد ایک نیا موقف اپنا لیا، موقف اختیار کیاگیاکہ فریقین کی جانب سے نیا موقف یکم جون اور چھ جون کو جمع کروائے گئے دستاویزات میں اپنایا گیا،نئے موقف کے مطابق میرے اہلخانہ کی جائیدادیں مختلف ویب سائٹس /سرچ انجن کے ذریعے تلاش کی گئیں،ویب سائٹس یا سرچ انجن کے ذریعے جائیدادوں کی تلاش عام ویب سائٹ طرز کی نہیں،سرچ انجن کے ذریعے جائیدادوں کو تلاش کرنے کیلئے ادائیگیوں سمیت مختلف مراحل سے گزرنا پڑتا ہے،موقف اختیار کیاگیاکہ اگر حکومت نے جائیدادوں کو سرچ انجن کے ذریعے تلاش کیا ہے تو اس کے دستاویزی۔ شواہد فراہم کئے جائیں، حکومت سرچ انجن کو ادائیگی کی تفصیلات فراہم کرے،عدالت میں ثابت کرچکا ہو کہ درخواست گزار وحید ڈوگر کو میرے اہلخانہ کے درست نام تک نہیں معلوم،درست نام کے اندراج کے بغیر جائداد کی تلاش نہیں کی جا سکتی۔

موقف اختیار کیاگیاکہ درحقیقت جاسوسی کے زریعے جائیدادیں ڈھونڈیں گئیں ،درخواست کو کیس کا حصہ بنایا جائے.

User Rating: Be the first one !

About Daily Pakistan

Check Also

جہاں عدالتوں کا احترام ختم ہو جائے وہاں خونی انقلاب آتا ہے، چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ جسٹس قاسم خان

جہاں عدالتوں کا احترام ختم ہو جائے وہاں خونی انقلاب آتا ہے، چیف جسٹس لاہور …

Skip to toolbar