Breaking News
Home / پاکستان / جسٹس فائز عیسیٰ کے خلاف دھمکی آمیز ویڈیو پر سپریم کورٹ نے ملزم افتخار الدین پر فرد جرم عائد کر دی

جسٹس فائز عیسیٰ کے خلاف دھمکی آمیز ویڈیو پر سپریم کورٹ نے ملزم افتخار الدین پر فرد جرم عائد کر دی

جسٹس فائز عیسیٰ کے خلاف دھمکی آمیز ویڈیو پر سپریم کورٹ نے ملزم افتخار الدین پر فرد جرم عائد کر دی

اگرآپ کو معاف کردیا توپورے ملک کا نظام فیل ہوجائےگا، عدالت اور اس کے ججزکے ساتھ مذاق نہیں کرسکتے، چیف جسٹس

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) سپریم کورٹ نے عدلیہ اور ججز خاص طور پر جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کے خلاف دھمکی و توہین آمیز ویڈیو ازخود نوٹس کیس میں ملزم آغا افتخار الدین مرزا کی معافی کی استدعا ایک مرتبہ پھر مسترد کرتے ہوئے فرد جرم عائد کردی۔

بدھ کو عدالت عظمیٰ میں چیف جسٹس گلزار احمد کی سربراہی میں 3 رکنی بینچ نے ججز اور عدلیہ کے خلاف آغا افتخار الدین توہین آمیز ویڈیو ازخود نوٹس کی سماعت کی۔دوران سماعت ملزم کی جانب سے کہا گیا کہ بحیثیت مسلمان معافی چاہتا ہوں کیونکہ اللہ کی عدالت میں بھی پیش ہونا ہے، اس پر بینچ کے رکن جسٹس اعجازالاحسن نے ریمارکس دیے کہ آپ کو بولنے سے پہلے سوچنا چاہیے تھا۔ جسٹس مظہر عالم نے ریمارکس دیے کہ انسان کو سمجھ بھی غلطی کرنے کے بعد ہی آتی ہے۔

اس موقع پر چیف جسٹس کی جانب سے یہ ریمارکس آئے کہ اگرآپ کو معاف کردیا توپورے ملک کا نظام فیل ہوجائے گا، عدالت اور اس کے ججزکے ساتھ مذاق نہیں کرسکتے۔

چیف جسٹس نے کہا کہ آپ کے دنیا بھرمیں رابطے ہیں اور پھرکہتے ہیں کہ غلطی سرزد ہوگئی،اس پر عدالت میں موجود اٹارنی جنرل نے کہا کہ اس معاملے پرتوہین عدالت کے قانون کا اطلاق ہوتا ہے۔جس پر چیف جسٹس نے اٹارنی جنرل سے پوچھا کہ جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کی اہلیہ کا بیان حلفی عدالت میں جمع کروایا گیا، کیا آپ نے اسے پڑھا، اس پر انہوں نے جواب دیا کہ انہیں یہ بیان حلفی ابھی ملا نہیں ہے۔

بعد ازاں عدالت نے ملزم آغا افتخار الدین مرزا پر فرد جرم عائد کرتے ہوئے ایک ہفتے میں جواب داخل کرنے کا حکم دے دیا اور کیس کی سماعت ایک ہفتے کے لیے ملتوی کردی۔

User Rating: Be the first one !

About Daily Pakistan

Check Also

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا چین میں ایک بینک اکاؤنٹ نکل آیا. نیویارک ٹائمز

چین میں بینک اکاؤنٹ کے ذریعے مقامی ٹیکسوں کی مد میں ایک لاکھ 88 ہزار …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Skip to toolbar